Urdu Stories

عمار اور زینب نے کینسر کے باوجود محبت کے سفر کو ادھورا نہ چھوڑا

اس دنیا میں اللہ تعالی نےٰ دو محبت کرنے والوں کے لئے شادی جیسا ایک خوبصورت رشتہ پیدا کیا ہے جبکہ میاں بیوی کے درمیان لازوال محبت کا ہونا ایک فطری عمل ہے لیکن لاہور سے تعلق رکھنے والے جوڑے عمار اور زینب کی محبت کی داستان اپنی نوعیت کی ایک غیر معمولی محبت ہے، جس میں دنوں کی جانب سے بتایا گیا کہ آخر محبت کا اصل مطلب کیا ہوتا ہے۔

کہانی کچھ یوں ہے کہ عمار اور زینب نے سال 2011 میں پنجاب یونیورسٹی کے سوفٹ ویئر انجینئرنگ کے ڈیپارٹمنٹ میں داخلہ لیا۔ دونوں وہاں سے اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد اپنے اپنے گھروں میں ایک دوسرے کے حوالے سے بتایا، جس پر ناصرف دونوں گھروں میں خوشی خوشی شادی کا معاملہ طے پا گیا چنانچہ نکاح کے لئے 10 اگست 2018 کا دن مقرر کیا گیا۔

عمار نے زینب سے 10 اگست کو شرعی نکاح کیا اور شوکت خانم سے علاج کروایا.. لیکن ئے بیمارے خطرناک اسٹیج تک پہنچ چکی تھی تو پھر اس علاج کے لیے انہیں چائینہ جانا پڑا 7 کروڑ روپے اس علاج کا خرچہ آیا اور 2 ماہ چائنا میں رہ کر زینب کا علاج کیا گیا…عمار کے بھائیوں نے بیرون ملک اپنا کاروبار بیچا پیسہ جو ملا پاکستان لے آیا،، عمار کی والدہ نے سارا سونا بیچا، زینب کے والدین نے سارا سونا بیچا اور پاکستانیوں سے فنڈنگ اکھٹی کی اور 7 کروڑ روپے جمع کیے…

عمار اپنی محبت کے لیے بہت لوگوں سے مدد مانگی اور آخر کار اس محبت کو بچانے میں کامیاب ہو گیا..ماشاء اللہاب یہ بہن زینب کینسر سے نکل گئی ہیں بس ادویات جاری ہیں جو 2 سال کھانی ہے…اللہ تعالیٰ شفا عطا فرمائے آمین ثم آمیناس واقعے میں 2 باتیں بہت اہم ہیں،، ایک بیماری کی وجہ سے عمار نے زینب کو نہیں چھوڑا بلکہ اسکی زندگی کی جنگ لڑی..دوسرا.. جس سے نکاح کا وعدہ کیا اس کو تلوار پر چل کر نبھایا…عمار جیسے مرد لاکھوں میں سے ایک ہوتے ہیں…پتہ نہیں وہ لوگ کون ہوتے ہیں کہ جو اولاد نہ ہونے کی وجہ سے بیویوں کو طلاق دے دیتے ہیں یا اولاد کی محرومی کی وجہ سے دوسری شادی کر لیتے ہیں یا پھر بیماری کی وجہ سے بیوی کو میکے چھوڑ آتے ہیں…

بیماری اور محرومی تو اللہ تعالیٰ کے اختیار میں ہے،، آپ وہ کریں جو آپکے اختیار میں ہے..بلاشبہ زینب ایک خوش قسمت بیوی ہے جسکا عمار جیسا شوہر ہے…سلام ہے عمار کے خاندان کو جنہوں نے اپنی بھابی بہو کے لیے بہت کچھ قربان کر دیا…


واضح رہے اس پورے واقع میں کچھ اہم پہلو سامنے آئے ، جن میں ایک یہ کہ انسان کو کبھی بھی مشکلات کو دیکھتے ہوئے گھبرانا نہیں چاہے، بلکہ ثابت قدمی کے ساتھ اللہ تعالیٰ پر بھروسہ کرکے مقابلہ کرنا چاہے۔ دوسرا یہ کہ عمار کا محبت میں کیا ہوا وعدہ کہ وہ زینب سے نکاح کرنا چاہتا ہے، لہذا مشکل ترین دور میں عمار نے وہ وعدہ پورا کیا۔ ایک بڑے انسان ہونے کا ثبوت دیا جو مشکل میں پیچھے نہیں ہٹا بلکہ زبان پر قائم رہا۔ ہماری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ دونوں کی آنے والی زندگیوں میں خوشیوں سے بھر دے

Leave a Comment